Tuesday, 2017-09-26, 11:54 PM
TEHREER
The Place of Entertainment and knowledge
Welcome Guest | RSS
Site menu
Categories
غزلیاتنظمیں
منتخب اشعارقطعات
Quotationsانتخاب
Entries archive
Recent Blogs-->
Recent Comments-->
thnx inam

hahahah

Thnx inam

hahah nice

thnx inam

Our poll
Rate my site
Total of answers: 22
Main » 2012 » March » 29 » Hamy koi ghum nahi ta ghum ay ashaqi se pehly
10:28 PM
Hamy koi ghum nahi ta ghum ay ashaqi se pehly
ہمیں کوئی غم نہیں تھا، غم ِعاشقی سے پہلے
نہ تھی دشمنی کسی سے، تیری دوستی سے پہلے

ہے یہ میری بد نصیبی، تیرا کیا قصور اس میں
تیرے غم نے مار ڈالا، مجھے زندگی سے پہلے

میرا پیار جل رہا ہے، اے چاند آج چھپ جا
کبھی پیار تھا ہمیں بھی، تیری چاندنی سے پہلے

میں کبھی نہ مسکراتا، جو مجھے یہ علم ہوتا
کے ہزار غم ملیں گے، مجھے ایک خوشی سے پہلے

یہ عجیب امتحان ہے، کہ تم ہی کو بھولنا ہے
ملے کب تھے اس طرح ہم، تمہیں بے دلی سے پہلے
Category: غزلیات | Views: 227 | Added by: Crescent | Rating: 0.0/0
Total comments: 0
Only registered users can add comments.
[ Registration | Login ]
Search
Login In
Recent Posts-->
Popular Threads-->
Recent Photos-->
Poetry blog
Copyright Tehreer © 2017