Sunday, 2017-11-19, 12:32 PM
TEHREER
The Place of Entertainment and knowledge
Welcome Guest | RSS
Site menu
Categories
غزلیاتنظمیں
منتخب اشعارقطعات
Quotationsانتخاب
Entries archive
Recent Blogs-->
Recent Comments-->
thnx inam

hahahah

Thnx inam

hahah nice

thnx inam

Our poll
Rate my site
Total of answers: 22
Main » 2012 » June » 2 » Mere chahny walo
0:27 AM
Mere chahny walo
میرے چاہنے والو


چشمِ نم کو روتے ہو؟
میری وحشتیں تم پر کیوں گراں گزرتی ہیں؟
میرے رنج و غم پر تم
کیوں اداس رہتے ہو؟
کیوں سوال کرتے ہو؟
میرے چاہنے والو !
کبھی ویران آنکھوں کا خواب بن کے دیکھا ہے؟
یاد میں ڈھلے ہو تم؟
کسی کے خشک ہونٹوں کی کانپتی دعاؤں میں
صد ہا برس رہ کر
خاک میں ملے ہو تم؟
سائبان کھویا ہے؟
دھوپ میں جلے ہو تم؟
زندگی کا حاصل جو پیار تم نے پایا تھا
نفرتوں میں بدلا ہے؟
دوستی کے پردے میں ملنے والے دشمن کے،
ہاتھ سے لٹے ہو تم؟
میرے چاہنے والو !
اُن ویران آنکھوں کا خواب تو بنو پہلے
یاد میں ڈھلو پہلے
مہربان آنکھوں کی
نفرتوں کو سہہ جاؤ،
خاک میں ملو پہلے
پھر تمہیں خبر ہوگی
میری وحشتیں کتنی
تلخ اک حقیقت ہیں
چشمِ تر کے آنسو بھی
گردشِ زمانہ کے درد کی امانت ہیں
درد تو سہو پہلے
پھر تمہیں خبر ہوگی
میرے چاہنے والو
Category: نظمیں | Views: 162 | Added by: Crescent | Rating: 0.0/0
Total comments: 0
Only registered users can add comments.
[ Registration | Login ]
Search
Login In
Recent Posts-->
Popular Threads-->
Recent Photos-->
Poetry blog
Copyright Tehreer © 2017