Saturday, 2017-11-18, 7:28 PM
TEHREER
The Place of Entertainment and knowledge
Welcome Guest | RSS
Site menu
Categories
غزلیاتنظمیں
منتخب اشعارقطعات
Quotationsانتخاب
Entries archive
Recent Blogs-->
Recent Comments-->
thnx inam

hahahah

Thnx inam

hahah nice

thnx inam

Our poll
Rate my site
Total of answers: 22
Main » 2012 » June » 2 » Mohabbat kuch nahi hote
0:42 AM
Mohabbat kuch nahi hote
محبت کچھ نہیں دیتی
سوائے خامشی کے
جو رگوں میں بہتی رہتی ہے
سوائے ایک ویرانی
جو دل پہ چھائی رہتی ہے
سوائے درد رسوائی
جو چاروں سمت ہوتا ہے
سوائے ایک اذیت
جو ساری عمر رہتی ہے
ہم اپنا سر اٹھا کر چل نہیں سکتے
گناہ کرتے نہیں
پھر بھی گنھگاروں میں شامل ہیں
روایت کے اسیروں کو
محبت کچھ نہیں دیتی
Category: نظمیں | Views: 155 | Added by: Crescent | Rating: 0.0/0
Total comments: 0
Only registered users can add comments.
[ Registration | Login ]
Search
Login In
Recent Posts-->
Popular Threads-->
Recent Photos-->
Poetry blog
Copyright Tehreer © 2017