Sunday, 2017-11-19, 12:34 PM
TEHREER
The Place of Entertainment and knowledge
Welcome Guest | RSS
Site menu
Categories
غزلیاتنظمیں
منتخب اشعارقطعات
Quotationsانتخاب
Entries archive
Recent Blogs-->
Recent Comments-->
thnx inam

hahahah

Thnx inam

hahah nice

thnx inam

Our poll
Rate my site
Total of answers: 22
Main » 2012 » May » 18 » Subha ki pehli kiran se ashna hota hua
12:28 PM
Subha ki pehli kiran se ashna hota hua
صبح کی پہلی دعا سے آشنا ہوتا ہوا
ایک سنّاٹا ہے مانوس ِصدا ہوتا ہوا

جاتے موسم کی عجب تصویر ہے چاروں طرف
درمیاں اس کے ہے ایک پتہ ہرا ہوتا ہوا

اتنی آگاہی تو ہے میں بڑھ رہا ہوں کس طرف
یہ نہیں معلوم کس سے ہوں جدا ہوتا ہوا

ایک نوا آہستہ آہستہ فنا ہوتی ہوئی
ایک حرفِ سد طلب چپ چاپ ادا ہوتا ہوا

بڑھ رہا ہے کون اپنا رستہ لیتے ہوئے
اپنے ہمراہوں سے چپکے سے خفا ہوتا ہوا
Category: غزلیات | Views: 171 | Added by: Crescent | Rating: 0.0/0
Total comments: 0
Only registered users can add comments.
[ Registration | Login ]
Search
Login In
Recent Posts-->
Popular Threads-->
Recent Photos-->
Poetry blog
Copyright Tehreer © 2017