Sunday, 2017-11-19, 12:29 PM
TEHREER
The Place of Entertainment and knowledge
Welcome Guest | RSS
Site menu
Categories
غزلیاتنظمیں
منتخب اشعارقطعات
Quotationsانتخاب
Entries archive
Recent Blogs-->
Recent Comments-->
thnx inam

hahahah

Thnx inam

hahah nice

thnx inam

Our poll
Rate my site
Total of answers: 22
Main » 2012 » May » 12 » Rahe han qaid esi khana e siyah main hum
7:38 PM
Rahe han qaid esi khana e siyah main hum
رہے ہیں قید اسی خانہ سیاہ میں ہم
بہت خراب ہوئے روشنی کی چاہ میں ہم

بجھے بجھے نظر آئیں تو اس پہ حیرت کیوں
بہت جلے ہیں کسی شعلہ نگاہ میں ہم

انا کی دھوپ بدن کو جلائے دیتی تھی
سو آگئے تری دیوار کی پناہ میں ہم

بدل گئیں وہ نگاہیں تو یاد آیا ہے
کسی کو بھول گئے تھے کسی کی چاہ میں ہم

یہ گرد گرد فضا راس ہی نہیں آئی
سو معتبر نہ ہوئے شہر کم نگاہ میں ہم

ستارہِ شب غم کو گواہ کرتے ہوئے
غروب ہوگئے آخت گل و گیاہ میں ہم
Category: غزلیات | Views: 174 | Added by: Crescent | Rating: 0.0/0
Total comments: 0
Only registered users can add comments.
[ Registration | Login ]
Search
Login In
Recent Posts-->
Popular Threads-->
Recent Photos-->
Poetry blog
Copyright Tehreer © 2017